خبر اور تجزیہ

سوات میں تین بچوں کی ماں نے پانچ بچوں کے باپ اپنے محبوب کو گولی سے اڑا دیا

سوات کے پختون سماج میں اپنے پیچھے کئی حساس سوالات چھوڑ جانے والی ایک ناکام محبت کے انتقام کی دکھ ناک کہانی ایک دل آزار اور سانحاتی انداز میں ختم ہو گئ

- Advertisement -
سوات میں ایک شادی شدہ خاتون نے محبت کی ناکامی سے دل برداشتہ ہو کر اسی شادی شدہ شخص کو فائرنگ کر کے ہلاک کردیا، جس سے وہ شدید محبت اور شادی کرنا چاہتی تھی لیکن بدقسمتی سے دو بار اور مردوں سے بیاہ دی گئی۔
 
یہ افسوس ناک واقعہ صوبہ کے پی کے کے ضلع سوات میں بری کوٹ کے مقام پر پیش آیا۔ جہاں مینا بازار میں مقتول کی کپڑے کی دکان میں خاتون نے ٹوپی والا برقعہ پہن کر اپنے محبوب شخص حسین علی کو گولی مار کر ہلاک کردیا ہے۔ مقتول حسین علی پانچ بچوں کا باپ تھا۔
 
پولیس کے مطابق یہ خاتون گریجویشن کر رہی تھی لیکن افلاس کی وجہ سے اپنی تعلیم مکمل نہ کر سکی۔ تین بچوں کی اس ماں کی اپنے ہمسائے مقتول حسین علی سے محبت کا رشتہ برسوں پرانا تھا۔ لیکن اس خاتون کو اسی محبت کی بدنامی کی وجہ سے دو بار طلاق ہوئی مگر وہ اپنے اس محبوب سے شادی کرنے میں ناکام رہی۔ جس کے بعد اس سے اپنی ناکام محبت کا انتقام اسی شخص کو قتل کر کے لیا جسے وہ ساری دنیا سے زیادہ چاہتی اور شادی کرنا چاہتی تھی۔
 
سوات پولیس کے تفتشی افسر نے بتایا کہ قاتل خاتون اور مقتول حسین علی ہمسائے تھے اور اوائل عمری سے ایک دوسرے کی محبت  میں گرفتار تھے۔ لیکن کئی سماجی رکاوٹوں کی وجہ سے ان دونوں کی شادی نہیں ہو سکی۔ محبت کا یہ سلسلہ سال گذشتہ چودہ سالوں سے جاری تھا ۔ پولیس کے مطابق لڑکی کی شادی کسی اور جگہ ہو گئی اور لڑکے کی شادی کسی اور لڑکی سے ہو گئی۔ لیکن دونوں ایک دوسرے کی محبت کے طلسم سے نہ نکل سکے۔
دونوں کے ہمسایوں کے مطابق مقتولحسین علی اس خاتون کے شوہر کو طعنے دیتا تھا کہ اس کے اس کی بیوی کے تعلقات ہیں۔ جس سے دلبرداشتہ ہو کر پہلے شوہر نے اس لڑکی کو طلاق دے دی۔ اس طلاق کے بعد خاتون کی کسی اور جگہ دوسری شادی کر دی گئی۔ خاتون کے دوسرے شوہر کو بھی مقتول حسین علی یہی طعنہ دیتا تھا اور دوسرے شوہر نے بھی خاتون کو طلاق دے دی تھی
 

پولیس تحقیقات کے مطابق خاتون راولپنڈی گئی اور اپنے تینوں بچے اپنے والد کے گھر چھوڑ آئی تھی۔ خاتون نے بتایا کہ وہ اسلحہ چلانا جانتی ہے اور اس نے قتل کیلئے پستول اپنے شوہر کے گھر سے لیا تھا۔

 
 خاتون نے بتایا کہ وقوعہ کے روز وہ مقتول سے خود کو چھپانے کیلئے ٹوپی والا برقعہ پہن کر بری کوٹ میں مینا بازار میں واقع مقتول حسین علی کی دوکان پر گئی تھی۔ وہ حسین علی کی دکان پر گئی تو اس وقت دکان میں کچھ عورتیں وجود تھیں۔ تفتیشی آفسر کے مطابق خاتون تھوڑی دیر بعد دوبارہ حسین علی کی دکان پر کپڑے خریدنے کے بہانے داخل ہوئی۔ اور فائرنگ کر کے حسین علی کا قتل کر دیا۔ قتل کے بعد لوگوں نے خاتون کو پستول سمیت پولیس کے حوالے کر دیا۔

اور یوں سوات کے پختون سماج میں اپنے پیچھے کئی حساس سوالات چھوڑ جانے والی ایک ناکام محبت کے انتقام کی دکھ ناک کہانی ایک دل آزار اور سانحاتی انداز میں ختم ہو گئ

- Advertisement -

تازہ ترین خبریں

Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

تازہ ترین