خبر اور تجزیہ

چین سے شکست خوردہ مودی سرکار نے چینی ٹک ٹاک اور موبائل ایپس پر پابندی لگا دی

عالمی مبصرین کے مطابق بھارت کی طرف سے چینی پراڈکٹس اور موبائل ایپس پر پابندی کی حالیہ کاروائی دراصل چین کے ہاتھوں ذلت آمیز شکست سے عوامی توجہ ہٹانے کیلئے ہے

- Advertisement -
بھارتی حکومت نے ٹِک ٹاک سمیت ساٹھ کے قریب چینی موبائل ایپ استعمال کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ چین کے ہاتھوں ذلت آمیز شکست اور 20 سے زائد فوجیوں کی ہلاکت کے بعد بھارتی حکومت نے چینی ایپس پر پابندی لگاتے ہوئے ناقابل فہم موقف اختیار کرتے ہوئے یہ کہا ہے کہ یہ بھارت کے اقتدار اعلیٰ اور سلامتی کیلیے خطرہ ہیں۔
 

بھارتی انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت نے حکم جاری کرتے ہوئے ٹک ٹاک، شیئر اِٹ، کلب فیکٹری، یو سی براؤزر، وی چیٹ اور بیگ لائیو سمیت 59 چینی ایپ پر فوری طور پر بابندی لگا دی ہے۔

 
وزارت ٹیکنالوجی کے مطابق بھارت کے سوا ارب شہریوں کے ڈیٹا کے تحفظ کے بارے میں تشویش ہے جبکہ بھارتی شہریوں کا ڈیٹا ہیک ہونے کے بارے شکایات موصول ہو رہی تھیں۔ جس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ موبائیل ایپس بھارتی سالمیت اور اقتدار اعلی اور امن کیلئے خطرہ ہیں۔ بھارتی حکومت کے اس فیصلہ کو دنیا بھر میں شکست سے توجہ ہٹانے کی کاروائی قرار دیا جا رہا ہے۔
 
چین سے حالیہ سرحدی جھڑپوں میں 20 بھارتی فوجیوں کی ہلاکت اور ساٹھ سے زیادہ زخمیوں کے بعد افسوس ناک ماحول سے جڑی ہوئی بھارتی شکست کے بعد بھارتی عوام اور اپوزیشن پارٹیاں نریندر مودی سرکار پر کڑی تنقید کر رہی ہیں۔ بھارتی عوامی حلقوں کے مطابق بھارتی حکومت کی طرف سے چینی ایپس پر پابندی شکست کے معاملات سے عوامی توجہ ہٹانے کی پالیسی ہے۔
 

خیال رہے کہ چین بھارت کشیدگی کی فضا میں نریندر مودی کے حامیوں کی طرف سے چینی پراڈکٹ کے بائیکاٹ کی مہم چل رہی ہے۔ مبصرین کے مطابق چینی ایپس پر پابندی بھارتی کی طرف سے چینی معیشت کیخلاف پہلا بڑا سرکاری قدم ہے۔

 
عالمی ماہرین کے مطابق چین اس وقت بھارت کا سب سے بڑا بزنس پارٹنر ہے۔ گزشتہ برسوں میں علی بابا، ٹینسینٹ، ٹی آر کیپیٹل اور ہل ہاؤس جیسی بڑی آن لائن ماکیٹس اور انٹرنیشنل چینی کمپنیوں نے بھارت میں اربوں ڈالر کی انوسٹ منٹ کر رکھی ہے۔ اس حوالے سے نہ صرف عالمی اقتصادی ماہرین اور خود بھارتی اکانومسٹ کا کہنا ہے کہ بھارت کی طرف سے چینی پراڈکٹس اور چینی کمپنیوں کے بائیکاٹ کے بعد چین سے زیادہ نقصان خود بھارت کا ہو گا۔
 
- Advertisement -

تازہ ترین خبریں

Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

تازہ ترین