خبر اور تجزیہ

دوبئی میں سیاحت کی تیز بحالی سے ٹورازم کو نئی زندگی ملی ہے

جناب شیخ محمد بن راشد المکتوم کی بصیرت پر مبنی قیادت میں دوبئی شہر کو سات جولائی سے سیاحوں کیلئے دوبارہ کھولنے کے بعد سے موثر اقدامات جاری رکھے ہوئے ہے۔

محکمہ سیاحت و کامرس مارکیٹنگ اور دبئی ٹورزم کے کثیر الجہتی روڈ میپ کے تیزرفتار اقدامات کی بدولت دبئی کے سیاحتی و مہمان نوازی کے شعبے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ دبئی ٹورزم کے ڈائریکٹر جنرل ہلال سعید المری نے کہا، نائب صدر ، وزیر اعظم اور دوبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد المکتوم کی بصیرت پر مبنی قیادت میں دوبئی شہر کو سات جولائی سے سیاحوں کے لئے دوبارہ کھولنے کے بعد سے موثر اقدامات جاری رکھے ہوئے ہے۔
 
دبئی میں دنیا کے معروف لگژری ہاسپٹلٹی برانڈ جمیرا کے سی ای او جوس سلوا نے کہا کہ ہمیں بین الاقوامی مارکیٹس خصوصا یورپ اور روس سے کافی اچھا ریسپانس ملا ہے بین الاقوامی سیاحوں کے لئے دوبارہ کھولے جانے کے بعد پہلے ہفتے سیاحت کے لئے آن لائن بکنگ گذشتہ ہفتے سے دگنی ہوگئی اور والے کمروں کی بکنگ میں روزانہ اوسطا 109 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
امارات اور فلائی دبئی ایئر لائنز کی جانب سے ہونے والی بکنگ بھی سیاحت کے شعبے کے لئے مثبت علامات سامنے آئی ہیں امارات اگست میں چھ براعظموں میں مجموعی طور پر 70 مقامات پر کام کرے گا ، جبکہ فلائی دبئی موسم گرما کے دوران اپنے نیٹ ورک کو 66 مقامات تک بڑھا رہی ہے۔ عالمی سیاحت کی تنظیم ، یو این ڈبلیو ٹی او کے مطابق ، کوویڈ ۔19 سے عالمی سیاحت اور اس سے متعلقہ شعبوں میں 1.2 ارب امریکی ڈالر سے 3.3 ٹریلین امریکی ڈالر تک کا نقصان ہوسکتا ہے۔
 
دبئی سیاحت کے سربراہ نے کہا کہ تاہم دبئی کے لئےبحران کی انتہا کا دورانیہ اسٹریٹجک بحالی کے لئے ایک موقع تھا سیاحتی شعبہ کے حکام نے پابندیوں کے خاتمے کے بعد سیاحوں کی توقعات پر پورا اترنے کے لئے ایک فریم ورک بنانے کے لئے کام کیا۔ “ہم نے کاروباری حکمت عملیوں اور منصوبوں پر ازسرنو غور کیا کہ اسٹاک ہولڈرز اور شراکت داروں کے ساتھ مل کر ‘نئے معمول کے لئے جدید اقدامات تیار کریں گے۔ ملکی سیاحت کے شعبہ کو دوبارہ زندہ کرنا بحالی منصوبے کا ایک اہم عنصر تھا۔
 
مئی میں ملکی سیاحت کے دوبارہ آغاز کے بعد دبئی میں زبردست اضافہ دیکھنے میں آیا ابتدائی مرحلے سے ، ساحل پر واقعہ مقامات پر ہفتے کے آخر میں قبضے کی شرح 80 فیصد سے زیادہ سامنے آئی ملکی مارکیٹ انتہائی اہم ثابت ہوئی اور ہم خصوصا اختتام ہفتہ کے آخر میں طلب میں اضافے کو دیکھ رہے ہیں۔ جمیرا گروپ کے سی ای او جوس سلوا نے کہا کہ دبئی میں وبائی بیماری کے موثر انتظام کے نتیجے میں انفیکشن کی تعداد کم ہوتی جارہی ہے اور بحالی کی شرح میں اضافہ ہوتا ہے اس سے شہر کو 7 جولائی کو سیاحوں کے لئے خود کو دوبارہ کھولنے میں مدد ملی۔
المری نے مزید کہا کہ ہم اپنے اہم شراکت داروں جیسے امارات اور فلائی دبئی کی جانب سے مسافروں میں اعتماد پیدا کرنے اور شہر کو پسندیدہ منزل بنانے کے لئے حوصلہ افزائی کرنے میں اہم کردار ادا کرنے کی وجہ سے بھی پر امید ہیں ہم 2020 کی آخری سہ ماہی میں اچھی پیشرفت کی توقع کررہے ہیں۔
 
ڈی سی ٹی سی ایم کے سی ای او عصام کاظم نے کہا غیر ملکی سیاحوں کے لئے اس شہر کو دوبارہ کھولنے کے لئے دوبئی نے ہوائی اڈوں پر آمد سے لے کر دبئی سے روانگی کے مقام تک ، سفر کے ہر مرحلے پر سیاحوں کو ایک ہموار اور محفوظ سفر کی یقین دہانی کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔
 
بین الاقوامی طریقوں کے مطابق حفظان صحت اور حفاظت کے اعلی معیار کو برقرار رکھنے کے دبئی کی کوششوں کا عالمی ٹریول اینڈ ٹورازم کونسل ، ڈبلیو ٹی ٹی سی نے بھی بھرپور اعتراف کیا جس نے وبا کے خلاف جنگ میں سخت اقدامات کے اعتراف میں شہر کو ‘سیف ٹریولز’ ڈاک ٹکٹ دیا۔

حوالہ خبر

ALSO READ THIS  امارات سے تاریخی مذاکرات کے بعد اسرائیل فلسطینی علاقوں میں مزید قبضہ نہیں کرے گا
ALSO READ THIS  سیاہ فام امریکی صحافی کی ڈائری ۔ بشکریہ وائس آف امریکہ

تازہ ترین کالم

احتجاج کا گورکھ دہندہ ! کیا جمہوری نظام میں پاکستان کی بقا ہے ؟

احتجاج ایک آرٹ ہے اور یہ آرٹ جمہوریت کی ناجائز اولاد...

قائد اعظم نیویارک اور موٹر وے۔ ڈاکٹر شکیل الرحمٰن فاروقی

اپنا اپنا انداز ہوتا ہے کہنے کا ورنہ ستمبر کی گیارہ...

رنگ میں بھنگ ۔ ڈاکٹر شکیل الرحمٰن فاروقی

وفاقی وزیرِ سائنس اور ٹیکنالوجی کے مطابق ایک اہم سنگِ میل...

Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

چین نیوز

چین نے ہندوستان کیخلاف ڈیموں کے واٹر بم کی دھمکی دے دی

لداخ سیکٹر میں ہندوستان کو فوجی محاذ پر بدترین...

چین نے ہندوستان کیخلاف ہولناک مائیکرو ویو ہتھیار استعمال کیے

چین کی رینمن یونیورسٹی کے انٹرنشنل ریلیشن کے وائس...

ترکی نیوز

DEFENCE TIMES

Military Jobs and Defence News

GULF ASIA NEWS

News and facts from Gulf and Asia