خبر اور تجزیہ

افغان طالبان کے افغان فوج کیخلاف شدید حملوں میں 300 فوجی جاں بحق 570 زخمی

امید ہے کہ امن مذاکرات جلد کامیاب ہوں گے اور کورونا بحران سے عاجز دکھی انسانیت پائیدار امن سے زندگی کی رونقوں کی طرف لوٹے گی 

- Advertisement -
افغانستان سرکاری ترجمان کے مطابق رواں ہفتے میں افغان طالبان کے حملوں میں افغان سیکیورٹی فورسز کے تین سو کے قریب فوجی ہلاک اور  پانچ سو ستر زخمی ہوئے ہیں۔ افغان طالبان نے ملک کے بتیس صوبوں میں چار سو سے زائد حملے کیے ہیں۔ جن میں براہ راست افغانستان کی سرکاری فورسز کو نشانہ بنایا گیا ہے۔
 
افغان ترجمان نے الزام عائد کیا ہے کہ ایک طرف افغان طالبان ملک میں امن قائم کرنے کی بات کرتے ہیں جبکہ دوسری طرف افغان فورسز پر مسلسل حملے بھی ہو رہے ہیں۔ افغان قومی سلامتی کونسل کا یہ بیان ایسے موقع پر جاری ہوا ہے جب افغانستان میں افغان طالبان اور حکومت کے درمیان امن مذاکرات سے ملک میں پائیدار امن قائم ہونے کی توقعات پیدا ہو رہی تھیں۔
 
گذشتہ بیس برس سے جاری افغان وار میں امریکہ کی انحادی رہنے والی نیٹو فورسز کے سیکرٹری جنرل سٹولن برگ نے گذشتہ ہفتے ایک بیانہ جاری کرتے ہوئے طالبان سے اپیل کی تھی کہ وہ تشدد امیزی سے اجتناب کر کے بین الافغان مذاکرات میں امن اور تعمیری سوچ کے ساتھ شریک ہوں۔
اس حوالے سے امن کی کوششوں کیلئے اتوار کو افغانستان میں اقوام متحدہ کے امدادی مشن کی لیڈر ڈیبرا لیونز نے افغان طالبان کی سیاسی ٹیم کے سربراہ ملا عبدالغنی برادر سے ملاقات کی۔ افغانستان کی سرکاری نیوز ایجنسی طلوع نیوز کے مطابق افغان مذاکراتی ٹیم نے افغان پارلیمانی اراکین سے ملاقاتوں کا سلسلہ تیز کر دیا ہے
 
یاد رہے کہ افغان طالبان اور امریکہ کے درمیان جو امن معاہدہ ہوا تھا، اس کے تحت افغانستان سےامریکی فوج کے انخلا کا پہلا مرحلہ ختم ہو گیا ہے۔ امریکی سینٹرل کمانڈ کے جنرل فرینک میک کینزی کے مطابق افغانستان میں افغانستان میں موجود امریکی فوجیوں کی تعداد 12 ہزار سے کم ہوکر 8 ہزار 6 سو رہ گئی ہے۔
عالمی مبصرین کے مطابق اس امن معاہدے کی کامیاب تکمیل کی راہ میں افغان حکومت کے رویوں سے ناخوش افغان طالبان کے شدت اختیار کرتے ہوئے حملے ہیں۔ جن کی وجہ افغان حکومت کی جانب سے پانچ ہزار افغان طالبان قیدیوں کی رہائی میں مسلسل تاخیری
حربے قرار دئے جا رہے ہیں۔

ہم امید کرتے ہیں کہ افغان حکومت اور افغان طالبان کے درمیان امن مذاکرات جلد کامیاب ہوں گے اور خطے میں کورونا بحران سے عاجز دکھی انسانیت پائیدار امن کے ساتھ زندگی کی رونقوں کی طرف لوٹے گی 

- Advertisement -

تازہ ترین خبریں

Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

تازہ ترین